یوٹیلٹی اسٹورز پر بھی چینی مہنگی؟

حالیہ چینی اسکینڈل کی فرانزک رپورٹ منظر عام پر آنے کے بعد عام تاثر یہی تھا کہ نہ صرف خود ساختہ چینی بحران کے ذمہ داران کو سزا دی جائے گی بلکہ بازار میں بھی چینی ارزاں نرخوں پر دستیاب ہوگی۔ بحران کے ذمہ داران کو سزا کیا دی جاتی اُلٹا یوٹیلٹی اسٹورز کو مہنگے داموں چینی فروخت کی جا رہی ہے۔
جیو کے پروگرام ’’آج شاہزیب خانزادہ کے ساتھ‘‘ میں اِس حوالے سے گفتگو کرتے ہوئے وزیراعظم کے معاونِ خصوصی برائے احتساب شہزاد اکبر نے کہا کہ شوگر ملز کا کارٹلائزیشن کے ذریعہ یوٹیلٹی اسٹورز کو مہنگی چینی فروخت کرنا زیادتی اور بدمعاشی ہے۔
شوگر ملز کارٹلائزیشن کا عالم یہ ہے کہ کچھ سال پہلے تمام شوگر ملز مالکان نے اتحاد کرکے یوٹیلٹی اسٹورز کو چینی بیچنے سے انکار کردیا تھا۔ شہزاد اکبر کا کہنا تھا کہ وزیراعظم کا شوگر مافیا کے حوالے سے موقف پہلے دن سے واضح رہا ہے، اتنی بڑی اور بااثر انڈسٹری کا فزانزک آڈٹ اور تحقیقات کو منطقی انجام تک پہنچانا آسان نہیں تھا۔
آئندہ شوگر ملز مالکان کیلئے مہنگے داموں چینی بیچنا مشکل ہوگا کیونکہ ہر سال لاگت کے تعین کے بعد چینی کی قیمت کا تعین کیا جا سکے گا، چینی اسٹاک کرنے اور فارورڈ سیلز سے متعلق بھی قوانین بنائیں گے۔
وزیراعظم کے معاونِ خصوصی برائے احتساب شہزاد اکبر کا چینی کی مہنگے داموں فروخت کو روکنے، چینی پر ملنے والی سبسڈی کو شوگر مافیا کی جیبوں میں جانے کے بجائے غریب کسان تک پہنچانے کیلئے عزم لائقِ تحسین ہے لیکن اِس وقت سب سے ضروری یہ ہے کہ نہ صرف یوٹیلٹی اسٹورز بلکہ باقی تمام اسٹوروں پر بھی چینی کی ارزاں نرخوں پر دستیابی کو یقینی بنائے جائے۔
نہ صرف چینی بلکہ دیگر اشیائے ضروریہ کی قیمتوں کو بھی قابو میں رکھنے کیلئے حکومت کو سخت اقدامات کرنا چاہئیں کہ اِن دنوں کورونا وائرس اور لاک ڈائون کو بہانہ بنا کر ناجائز منافع خوری کا بازار خوب گرم ہے۔

50% LikesVS
50% Dislikes

About HumPK

Check Also

ای کامرس بزنس میں سیلز ٹیکٹیکس سے بڑا فائدہ

فی الحال ، بہت سے کاروباری افراد روایتی طریقے سے مختلف ای کامرس چینلز کو …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *